تازہ تر ین
یورپ کیا واقعی تباہی کے دھانے پر ہے؟ بابا وانگا کی 10 حیران کن پیش گوئیاں
یورپ کیا واقعی تباہی کے دھانے پر ہے؟ بابا وانگا کی 10 حیران کن پیش گوئیاں

یورپ کیا واقعی تباہی کے دھانے پر ہے؟ بابا وانگا کی 10 حیران کن پیش گوئیاں

یورپ کیا واقعی تباہی کے دھانے پر ہے؟ بابا وانگا کی 10 حیران کن پیش گوئیاں

یورپ کیا واقعی تباہی کے دھانے پر ہے؟ بابا وانگا کی 10 حیران کن پیش گوئیاں

یورپ تباہی کے دھانے پر ہے؟ بابا وانگا کی 10 حیران کن پیش گوئیاں

لاہور(نیوز ڈیسک) بلغاریہ سے تعلق رکھنے والی اس خاتون کے ماننے والے دعویٰ کرتے ہیں کہ انہوں جو بھی پیش گوئیاں کی ہیں وہ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ پوری ہو رہی ہیں۔ غیر ملکی میڈیا میں ان کی ایک پیش گوئی پر بحث کی جا رہی ہے جس کے مطابق 2016 میں یورپ تباہ وبرباد ہو جائے گا۔

بابا وانگا کا انتقال 1996 میں ہوا لیکن اس سے پہلے ہی وہ مختلف پیش گوئیاں کر چکی ہیں.

 

9 sept

2001 میں ورلڈ ٹریڈ سینٹر پر حملے، 1989 میں بابا وانگا نے کہا تھا کہ امریکی لوگ انتہائی خوف میں مبتلا ہوں گے جب ان پر دو آہنی پرندے حملہ کریں گے اور ہر طرف دہشت کا راج ہوگا۔ کہا جاتا ہے کہ یہ پیشگوئی نائن الیون کے بارے میں کی گئی تھی۔  جب امریکہ کے تجارتی مرکز ٹوئن ٹاور پر نیویارک میں حملہ ہوا تو کسی کے وہم و گمان میں نہ تھا کہ یہ تاریخ دانوں کی سیاسی لغت میں ایک “اصطلاح ” کا روپ دھار لیگی اور یہ اصطلاح دنیا میں ایک نئی جنگ کا نقطہ آغاز ثابت ہوگی ۔

 

sonami

2004 میں سونامی، بحر ہند میں اٹھی سونامی لہر سے مرنے والوں کی دسویں برسی منائے جانے کی تقریبات آج پورے ایشیا میں ہوئی ہیں۔ سب سے زیادہ مرنے والوں کے مقام انڈونیشیا کے صوبہ اچیہ میں لوگوں نے مساجد میں جمع ہو کر مرنے والوں کی بخشش کے لیے دعائیں مانگیں۔ یہ مقام زلزلے کے مرکز کے نزدیک ترین واقع تھا۔ مختلف اندازوں کے مطابق زلزلہ 9 اعشاریہ ایک سے نو اعشاریہ تین درجے کا تھا۔ جب سے زلزلوں پر نگاہ رکھی جا رہی ہے یہ تیسرا شدید زلزلہ تھا۔ اچیہ میں ایک لاکھ ستر ہزار افراد مرے تھے۔

 

obama

سیاہ فام کے امریکی صدر بننے, وہ نسل پرستی کو امریکی معاشرے کے چہرے پر ایک بدنما داغ بھی قرار دے چکے ہیں۔ امریکا، جو کہ جمہوریت، انسانی حقوق آئینی روایات سمیت آج کی دنیا کا رہنما ہے، اُس کے سیاہ فام صدرکے منہ سے ادا ہونے والے یہ الفاظ بلاشبہ اہمیت کے حامل ہیں.

 

 

saudia

انقلابی تحریکوں کے سلسلے, 2010 میں عرب دنیا میں ابھرنے والی انقلابی تحریکوں کے سلسلے ’عرب بہار‘ کی پیشین گوئی کر چکی تھیں۔ چَودہ جنوری 2011 کو تیونس کے عوام جوق در جوق ملکی دارالحکومت کی سڑکوں پر نکل آئے اور اُنہوں نے طویل عرصے سے برسرِاقتدار چلے آرہے آمر حکمران زین العابدین بن علی کی حکومت کا تختہ الٹ کر پوری دنیا کو حیران کر ڈالا۔

 

 

russia

بابا وانگا نے سوویت یونین ٹوٹنے،

 

 

 

 

 

chalnobill

چرنوبل کے حادثے،

 

 

 

 

 

stalin

سٹالن کی تاریخ وفات

 

 

 

 

 

 

kursak

روسی آبدوز کرسک کی تباہی بھی پیش گوئیاں بھی کیں جو بالکل درست ثابت ہوئیں۔

 

 

 

 

 

europe

بابا وانگا کے مطابق 2016 میں براعظم یورپ کے ملکوں کو مسلمان عسکریت

پسندوں کے حملوں کا سامنا کرنا پڑے گا. جن کے نتیجے میں یورپ کو بھاری جانی اور مالی نقصان اٹھانا پڑے گا۔

 

 

 

china

بابا وانگا کی پیشن گوئیاں ہیں کہ

2018 میں چین دنیا کی سب سے بڑی سپر پاور بن جائے گا۔

 

 

 

 

2023 زمین کے مدار میں ہلکی سی تبدیلی آئے گی۔ earth

 

 

 

 

 

 

2028 میں انسان توانائی کا ایک نیا ذریعہ تلاش کر لے گا۔power

اناج کی کمی ختم ہونا شروع ہو جائے گی۔

 

 

 

 

 

 

سیارے زہرہ کی جانب ایک انسانی خلائی مشن بھیجا جائے گا۔venus

 

 

 

 

 

pole2033 میں قطبین پر جمی ہوئی برف پگھل جائے گی اور سمندروں میں پانی

کی سطح بلند ہو جائے گی۔

 

 

 

 

2043 میں مسلمانوں کو براعظم یورپ پر کنٹرول حاصل ہو جائے گا۔ یورپ کےrome

زیادہ تر حصے  خلافت کے تحت آ جائیں گے جبکہ اس کا مرکز روم ہو گا۔

 

2046 انسان اپنی مرضی کے مطابق انسانی اعضا بنا سکے گا۔ اعضاءکی تبدیلی امراض کے علاج کا ایک اہم ذریعہ بن جائے گا۔

 

 

2066

2066 میں ایک مسجد پر حملہ ہونے کے بعد امریکا غیر معمولی ہتھیار استعمال کرے گا. جس سے درجہ حرارت اچانک گر جائے گا۔

 

 

 

 

2100 میں مصنوعی سورج زمین کے تاریک حصوں کو روشنی دے گا.new sun