طالبان نے افغانستان میں پاکستانی ہیلی کاپٹر میں سوار لوگوں کو یرغمال بنا لیا.

ہیلی کاپٹر

طالبان نے افغانستان میں پاکستانی ہیلی کاپٹر میں سوار لوگوں کو یرغمال بنا لیا.

طالبان نے افغانستان میں پاکستانی ہیلی کاپٹر میں سوار لوگوں کو یرغمال بنا لیا.

پاکستانی ہیلی کاپٹر ایم آئی 17 نے ہنگامی لینڈنگ

افغان صوبے لوگر میں پاکستانی ہیلی کاپٹر ایم آئی 17 نے ہنگامی لینڈنگ کی. جہاں موجود طالبان نے ہیلی کاپٹر میں سوار 7 افراد کو یرغمال بنا لیا۔

پنجاب حکومت کا ایم آئی 17 ہیلی کاپٹر اوورہالنگ کے لیے پشاور سے ازبکستان جارہا تھا. کہ اس دوران ہیلی کاپٹر کو افغانستان کے صوبے لوگر میں ہنگامی لینڈنگ کرنا پڑی۔  طالبان نے ہیلی کاپٹر میں سوار 6 پاکستانی اور ایک روسی کو یرغمال بنا کر ہیلی کاپٹر کو تباہ کردیا۔

ہیلی کاپٹر کے لینڈنگ کرتے ہی طالبان نے اسے آگھیرا

ہیلی کاپٹر مرمت کے لیے جا رہا تھا. اس نے شیڈول کے مطابق پشاور سے ٹیک آف کیا. اور اس نے براستہ افغانستان ازبکستان جانا تھا. جہاں اس کی منزل بخارب تھی، ہیلی کاپٹر نے افغانستان میں داخل ہوتے ہوئے. کرم ایجنسی کے قریب فنی خرابی یا کسی دوسری وجہ کے باعث افغان علاقے لوگر میں ہنگامی لینڈنگ کی۔ ذرائع نے بتایا کہ افغان علاقہ لوگر طالبان کے زیر تسلط ہے. جہاں ہیلی کاپٹر کے لینڈنگ کرتے ہی طالبان نے اسے آگھیرا. اور ہیلی کاپٹر کو تباہ کرکے اس میں سوار تمام افراد کو یرغمال بنا لیا۔

یلی کاپٹر میں پاک فوج کے کرنل (ر) صفدر، لیفٹیننٹ کرنل (ر) شفیق، میجر (ر) صفدر، فلائٹ انجینئر کرنل (ر) ناصر کیبن کریو ناصر اور داؤد جب کہ روسی نیوی گیٹر سرگئی سیویسٹیانوف بھی شریک تھے۔  ترجمان پنجاب حکومت نے بتایا کہ واقعہ پر لمحہ بہ لمحہ افغان حکام سے رابطے میں ہیں. تاہم کسی سے رابطہ نہیں ہوسکا ہے۔

پاکستانی دفتر خارجہ  افغان حکومت سے رابطہ

پاکستانی دفتر خارجہ کے ترجمان نے واقعہ پر ابتدائی بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے. کہ ہیلی کاپٹر حادثے کا میڈیا کے ذریعے معلوم ہوا جب کہ ہم اس پر افغان حکومت سے رابطہ کیا ہے. اور مزید تفصیلات حاصل کررہے ہیں۔ ترجمان نے کہا کہ ہیلی کاپٹر کے لیے افغان فضائی حدود کی اجازت لی گئی تھی.  پنجاب حکومت کے ایک ہیلی کاپٹر کو مرمت کے لیے جانا تھا۔

ادھر پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کا کہنا ہےکہ ہیلی کاپٹر کے واقعہ پر آرمی چیف نے افغانستان میں امریکی کمانڈر جنرل نکلسن سے رابطہ کیا. اور کریو ممبرز کی حوالگی کے لیے کہا. جس پر جنرل نکلسن نے تعاون کی مکمل یقین دہانی کرائی ہے۔ ترجمان پاک فوج کے مطابق واقعہ پر افغان حکومت اور افغان نیشنل آرمی سے بھی رابطہ ہوا ہے